جو شخص یہ وظیفہ صبح و شام پڑ ھ لےتو اللہ تعالیٰ اس کو تمام بیماریوں ،وباؤں اور محتاجی سے محفوظ رکھے گا

وظیفہ

! کائنات نیوز! اے اللہ ! میرے بدن میں عافیت رکھ یعنی عافیت میں رکھ مجھے میرے بد ن کے اعتبار سے یعنی میرے جسم کو عافیت میں رکھ۔ اے اللہ! میرے کانوں کو عافیت میں رکھ ۔ میرے کانوں کو عافیت میں رکھ۔ میرے کانوں کو تکلیف نہ پہنچے۔ اے اللہ! میری نگاہوں کو عافیت میں رکھ ۔ میری نگاہ کو تکلیف نہ ہو۔ تیرےسوا کوئی اللہ نہیں۔ بہت سے لوگ اس بارے میں فکر مند رہتے ہیں کہہماری سماعت کو ہماری نگاہ کو کچھ نہ ہو جائے تو

اپنی جسم کی حفاظت بھی عبادت ہے۔ تا کہ آپ اچھے کاموں میں زیادہ سے زیادہ حصہ لے سکیں۔ حضرت ابو بکر سے روایت ہے کہ وہ رسول اللہ ﷺ کو صبح و شام یہ کلمات پڑ ھتے سنا کر تے تھے۔ یعنی آپ ﷺ کا اپنا معمول تھا کہ آ صبح و شام اپنی صحت اپنے کانوں ، اپنی آ نکھوں کی صحت کے لیے دعائیں کر تے رہتے تھے۔خاص طور پر عافیت کی دعا کرتے تھے۔ اس میں صحت بھی شامل ہےا ور اس میں غلط استعمال سے بھی بچنے کی ہدایت ہے۔ کہ ہمارے کان غلط نہ سنیں ۔ کہ ہماری زبان غلط نہ بو لے۔ اور ہماری آ نکھیں کچھ غلط نہ دیکھیں۔ ان سب کو عافیت میں رکھ کہ ہمارا یمان باقی رہے۔اللھم عافنی فی بدنی۔ اللھمہ عافنی فی معی ، اللھم عافنی فی بصیری ۔لا الہ الا انتایمان کے بعد صحت خدا کی عظیم نعمت ہے۔ اس نعمت سے لاپروائی برتنا مسلمان کے شایانِ شان

نہیں۔ صحت کی قدر اور اس کیحفاظت ایک مسلمان کا فرض ہے۔ کسی نے بہت پیاری مثال دی کہ ’’جس طرح حقیر دیمک بڑے بڑے کتب خانوں کو چاٹ کر تباہ کرڈالتی ہے،۔ اسی طرح صحت کے معاملے میں معمولی سیغفلت بھی حقیر سی بیماری کا پیش خیمہ بن سکتی ہے۔‘‘انسانی صحت کے تقاضوں سے غفلت برتنا اور اس کی حفاظت میں کوتاہی کرنا بے حسی بھی ہے اور اللہ تعالیٰ کی ناشکری بھی ۔۔ کتنے لوگ ہیں جو اپنے گھروں اور اسپتالوں میں کیسی کیسی بیماریوں میں گھرےپڑے ہیں ۔ لہذا آج ہم آپ کے لیے ایک ایسا ہی وظیفہ لے کر آئے ہیںجس کی مدد سے اللہ رب العزت مریضوں کودائمی صحت عطا فرما یں گے۔ لا علاج بیماریاں ختم فرمادیں گےاور گھر سے غریبی اور تنگ دستی ہمیشہ کے لیے ختم ہو جائے گی۔

اگر آپ بھی ہر کسی کی نظروں میں عزت پا نا چاہتے ہیں اور تنگدستی کو دور کرنا چاہتے ہیں تو یہ وظیفہ آپ کے لیے بہت ہی مجرب ہے۔ آپ بھی اس عمل کو اللہ کی ذات پر پختہ اور کا مل یقین رکھتے ہوئے کر لیں۔اس وظیفہ کو اللہ والوں نے آزمایا ہے اصل وظیفے کا مطلب یہ ہوتا ہے کہ اللہ سے اپنا تعلق قائم کرنا اور اللہ سے مانگنا تو مختلف طریقے ہوتے ہیں مختلف وظیفے ہوتے ہیں جو بھی بتایا جائے اس کے اوپر آپ مکمل یقین رکھ کر وہ وظیفہ کریں تو انشاء اللہ تعالیٰ اللہ رب العزت ضرور مدد فرماتے ہیں یہ وظیفہ بہت ہی آسان ہے آپ اس کو توجہ سے سنئے جو اس معاملے میں پریشان ہو روزی کے معاملے میں اس وظیفہ کو کرنا شروع کردے انشاء اللہ تعالیٰ اللہ اپنی رحمت سے حلال پاکیزہ اور کشادہ روزی عطافرمائیں گے

یہ وظیفہ آپ نے زندگی کا معمول بنا نا ہےاور ہفتے میں ایک دن کرنا ہے۔ 18 جمعہ کا مبارک دن مغرب اور عشاء کے درمیان اس وظیفہ کو کرلینا ہے آسان ہے وظیفہ پورے دھیان سے توجہ سے سنیں اول آخر ایک ایک مرتبہ درود ابراہیمی پڑھنا ہے اور اس کے بعد گیارہ مرتبہ سورہ فاتحہ پڑھنی یعنی الحمدشریف پوری پڑھنی ہے وللضالین آمین تک اس طرح آپ نے گیارہ مرتبہ پڑھنا ہے اور اس کے بعد سورہ کوثر گیارہ مرتبہ پڑھنی ہے ۔ ،جب آپ وظیفہ شروع کریں گے تو اعوذباللہ اور بسم اللہ یہ دونوں آپ نے شروع میں پڑھ لینی ہے ہر دفعہ سورہ فاتحہ کے ساتھ اعوذ باللہ اور بسم اللہ پڑھنے کی ضرورت نہیں ہے بس ابتداء میں پڑھ لیجئے تو گیارہ دفعہ سورہ فاتحہ اور گیارہ دفعہ سورہ کوثر اور گیارہ سور ہ اخلاص پڑھ لیں ہر

جمعے کو مغرب اور عشاء کے درمیان یہ عمل کر لیجئے مسجد میں بیٹھ کر بھی آپ کر سکتے ہیں گھر میں بھی کرسکتے ہیں وظیفے کے دوران آپ نے کسی سے گفتگو نہیں کرنی باوضو یہ وظیفہ کریں ۔ مرد حضرات بھی کرسکتے ہیںاور میری محترم مائیں بہنیں بیٹیاں بھی یہ وظیفہ کر سکتی ہیں یہ وظیفہ آپ نے پوری زندگی کا معمول بنانا ہے ہر جمعہ یہ وظیفہ کر لیا کریں انشاء اللہ ایک جمعہ سے لے کر آئندہ دوسرے جمعہ تک اللہ آپ کو حلال اور کشادہ رزق عطا فرمائیں گے دوسرے جمعے کو جب کریں گے تو پھر اگلے جمعے تک اللہ اپنی رحمت سے رزق کے دروازے کھول دیں گے اسی طرح اپنی زندگی کا اسے معمول بنا لیجئے اللہ کی طرف سے حلال اور پاکیزہ رزق کی آپ کے گھر میں موصلہ دھار بارش ہوجائے گی۔

اپنے اعمال پر توجہ دیجئے حقوق العباد لازمی پورے کیجئے اور حقوق اللہ کا بھی خیال رکھئے کیونکہ اللہ کبھی حقوق کے تلف کرنے والے کو پسند نہیں فرماتا قیامت کے دن اللہ اپنے حقوق تو معاف فرمادے گامگر حقوق العباد یعنی اللہ کی مخلوق کے حقوق جو آپ نے ادا نہیں کئے ہوں گے ان کو معاف نہیں فرمائے گا ان پر آپ کو سزاد دی جائے گی اور آپ کی نیکیوں سے ان حقوق کو ادا کیا جائے گا ۔ اللہ ہم سب کا حامی و ناصر ہو۔آمین

Leave a Comment